•اے ابنآدم! یہ تو کس راستے کا انتخاب کرنے جا رہا

google.com
تجھے خبر ہے؟؟ تو اپنی آخرت تباہ کرنے جا رہا ہے۔•
ہمارے اردگرد میں کآفی لوگ ایسے موجود ہوتے ہیں جو کسی گھریلو مصیبت یا اپنی پڑھائی کی ٹینشن کو سر پر سوار کر بیٹھتے ہیں،جس کی وجہ سے وہ ذہنی دباؤ کا شکار ہوتے ہیں اور یہ بات ڈر یا گھریلو حالات کی وجہ سے کسی سے کہہ نہیں پاتے یا کسی ایسے انسان کو بتا دیتے ہیں جو ان کی اس معاملے میں کوئی مدد نہیں کر سکتا۔اگر دباؤ بڑھ جائے تو متاثرین ہمت ہر جاتے ہیں جس کی وجہ سے وہ اپنے آپ کو نقصان پہنچاتے ہیں یہاں تک ک نوبت خودکشی پر آن پہنچتی ہے۔ان میں سے اکثر تعداد کی عمر ۱۷ سے ۲۰ سال کی ہوتی ہے۔اسی بات کی آگاہی ک لیے ۱۰ اکتوبر کو ورلڈ مینٹل ِ ہیلتھ ڈے منایا جاتا ہے،جس دوں میں بڑی تعدد میں سیمینا ر کروائے جاتے ہیں۔ان سیمینار کا مقصد لوگوں میں ذہنی امراض کی آگاہی دینا اور اُن متاثرہ لوگوں کی مدد کرنا جو ک ذہنی دباؤ کا شکار ہیں۔یہ معاملہ کافی سنگین ہے اور اس کی سب سے بڑی وجہ لوگوں میں آگاہی نہ ہونا ہے۔حکومت کو سرکاری سطح پر مختلف پروگرام کا انيقاد کرنا چاہئے.
By: Ibrahim Munir

Leave a Reply